برما کے بعد ایک اور ملک میں مسلمانوں کی شامت آگئی، انتہا پسند عیسائیوں کا مسجد پر حملہ

بانگی دنیا کا شایدہی کوئی ایسا خطہ ہو جہاں مسلمانوں کی امن و سلامتی کی زندگی نصیب ہو۔ کشمیر، فلسطین اور برما میں ہونے والے مظالم ہی کچھ کم نہ تھے کہ اب وسطی افریقی جمہوریہ کی ایک مسجد میں بھی عیسائی شدت پسندوں نے حملہ کرکے 25مسلمانوں کو شہید کردیا ہے۔


ڈیلی صباح کے مطابق عیسائی انتہا پسندوں نے یہ حملہ ملک کے جنوبی خطے میں کیمبی کے علاقے کی ایک مسجد میں کیا۔ ایک مقامی مسلم تنظیم کے صدر عبدالرحمن بورنو نے بتایا کہ باغیوں نے صبح کے وقت مسجد پر حملہ کیا۔ حملہ آوروں نے مسجد کے امام اور نائب امام کو سب سے پہلے شہید کیا جس کے بعد دیگر نمازیوں کو نشانہ بنایا۔

وسطی افریقی جمہوریہ ہیرے کی کانوں سے مالا مال ملک ہے لیکن بدقسمتی سے گزشتہ کئی سالوں سے جاری تشدد اور دہشتگردی کے واقعات نے اس کی معیشت کو تباہ کرکے رکھ دیا ہے۔ گزشتہ پانچ سال سے یہاں کے مسلمانوں اور عیسائیوں کے درمیان ایک جنگ کی کیفیت ہے اور آئے روز پرتشدد واقعات رونما ہوتے ہیں۔
گزشتہ سال قدرے پرامن گزرا لیکن رواں سال کے آغاز سے ہی ایک بار پھر ہنگامے شروع ہوگئے اور ملک کے مختلف علاقوں میں لڑائی شروع ہوگئی۔ فرقہ وارانہ فسادات میں گزشتہ چار سال کے دوران ہزاروں افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں اور لاکھوں اپنے گھروں کو چھوڑ کر ہمسایہ ممالک کے پناہ گزین کیمپوں میں مقیم ہیں۔
عالمی ادارے ایمنسٹی انٹرنیشل کے مطابق وسطی افریقی جمہوریہ میں فرقہ وارانہ فسادات میں 5000 سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ فسادات کا آغاز 2013ءمیں اس وقت ہوا جب باغیوں نے عیسائی رہنما فینکوا بوزیز کی حکومت کا خاتمہ کردیا۔ تب سے مسلمانوں اور عیسائیوں کے درمیان لڑائی کا سلسلہ جاری ہے اور دونوں اطراف کا بھاری نقصان ہو چکا ہے۔

حوالہ

Author: admin
Is An Online Platform For Latest Gist On News, Entertainment, Business Tips & Updates, Dating Tips, My School News And More To Explore From Us.

Leave a Reply

Your email address will not be published.